میڈیٹرینیئن ڈائٹ جوڑوں کے درد میں مفید

پاکستان سمیت دنیا بھر میں لاکھوں افراد گنٹھیا اور جوڑوں کے شدید درد کے عارضے میں مبتلا ہیں جن کی تعداد میں مسلسل اضافہ ہوتا جارہا ہے۔ اس ضمن میں ورزش، فزیو تھراپی، ادویہ اور غذائیں اہم کردار ادا کرتی ہیں۔ ماہرین غذائیات نے اس ضمن میں ایسی عام غذائوں کی ایک فہرست بنائی ہے جو گنٹھیا کے مرض میں انتہائی مفید ثابت ہوسکتی ہیں۔ اس ضمن میں کئی پھل اور سبزیاں بھی اہم کردار ادا کرتی ہیں۔ یونیورسٹی آف سائوتھ ایمپٹن کے پروفیسر فلپ کالڈر نے کہا ہے کہ میڈیٹرینیئن ڈائٹ پھل، سبزیوں، پورے اناج، دالوں، پھلیوں، تھوڑی مچھلی، کم چکنے گوشت اور زیتون کے تیل پر مشتمل ہوتی ہے۔ اس میں شامل اینٹی آکسیڈنٹس، اومیگا تھری ، مونو سیچیوریٹڈ فیٹس ہر طرح بدن کے لئے مفید ہوتے ہیں لیکن یہ جوڑوں کی سوزش کم کرنے میں اپنا ثانی نہیں رکھتے۔ اگر اس غذا میں سبزی بڑھادی جائے تو دو ہفتے میں جوڑوں کا درد کم ہونے لگتا ہے جو 2015کے ایک مطالعے سے ثابت ہوچکا ہے۔ میڈیٹرینیئن ڈائٹ تین ماہ مسلسل کھانے سے اس مرض کی شدت بہت حد تک کم ہوجاتی ہے۔ امریکا میں یونیورسٹی آف روچیسٹر کے ماہرین نے ثابت کیا ہے کہ جنک فوڈ نظام ہاضمہ کے بیکٹیریا کو کچھ اس طرح تبدیل کرتا ہے کہ وہ گنٹھیا کے مرض کی وجہ بھی بن سکتا ہے۔ اس ضمن میں دہی اپنا اہم کردار ادا کرتی ہے۔ دہی معدے، آنتوں اور دیگر نظام ہاضمہ میں صحت مند بیکٹیریا کی تعداد برقرار رکھتی ہے۔ آپ یقین کریں کہ روزانہ ایک پیالہ مکمل اناج یا جو کا دلیہ کھانے سے جوڑوں کا درد بہت حد تک کم ہوجاتا ہے۔ اس کے ساتھ یہ دل، بلڈ پریشر اور ذیابیطس کے لئے بھی بہت مفید ہوتا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں