موا پرندے

Moa Birds
آج اپنے دلچسپ معلومات پیج کے دوستوں کو “موا” پرندوں کے بارے میں کچھ معلومات دیتے ہیں۔ “موا” پرندوں کی ایک نسل تھی جو اس وقت ناپید ہوچکی ہے یہ پرندے شتر مرغ سے سائز میں کچھ بڑے ہوتے تھے۔ اور ان کے جسم پر بال بھی شتر مرغ کی نسبت زیادہ ہوا کرتے تھے۔ موا پرندے نو اقسام پر مشتمل تھے۔ جن میں دو اقسام Dinornis robustus and Dinornis novaezelandiae کے پرندے سائز میں کافی بڑے ہوتے تھے۔ جن کا سائز 3.6 میٹر یا 12 فٹ تک ہوتا تھا۔ (ذہن میں رہے میل شتر مرغ کا سائز 2 میٹر سے لیکر 2.8 میٹر تک ہوتا ہے۔)
“موا” پرندوں کی ان اقسام کا وزن تقریبا 230 کلوگرام تک ہوتا تھا۔ 1830ء میں پہلی مرتبہ moa نامی مخلوق کی ہڈیاں دریافت ہوئی تھیں تو اس ماہر حیاتیات کا خیال ہے کہ اس مخلوق کا تعلق پرندوں کی شتر مرغ کی طرح کی نسل سے تھا۔اور آج سائنس بتاتی ہے کہ یہ ایک ایسا پرندہ تھا جو اڑنے کی صلاحیت نہیں رکھتا تھا اور نیوزی لینڈ میں پایا جاتا تھا۔ اور بہت زیادہ شکار کی وجہ سے یہ دنیا سے ناپید ہوگیا۔

[Total: 0    Average: 0/5]

Spread the love